خُدا اولاد دے تو صحت مند دے ۔۔ پیدائشی طور پر جگر کی بیماری میں مبتلا بچے کے والدین ہر ایک سانس کے لیئے روتے ہیں

بچے اللّٰہ کا دیا ہوا وہ انمول تحفہ ہوتے ہیں جو میاں بیوی کے رشتے کو مکمل کرتے ہیں اور انھیں والدین کا درجہ دلواتے ہیں۔ بچوں سے محبت قدرتی بات ہے، لیکن جب وہی بچہ تکلیف میں ہو تو والدین کی تکلیف کئی گناہ زیادہ بڑھ جاتی ہے اور وہ ہر ممکن کوشش کرتے ہیں کہ ان کا بچہ ٹھیک ہوجائے۔

آج ایسی ہی ایک کہانی ہم آپ کو بتانے جارہے ہی، یہ کہانی ہے ایک 3 سال کے بچے کی جو پیدائشی طور پر جگر کی بیماری میں مبتلا ہے، اسکے ساتھ کیا ہوا آئیے جانتے ہیں

بچے لٓکے والد ارون کمار کے مطابق، ایانش کو کچھ وقت پہلے بخار ہوا ہم نے سوچا کہ کچھ دنوں کے بعد ختم ہو جائے گا لیکن حالات بد سے بدتر ہوتے گئے۔ اس کی آنکھیں اور جلد پیلی پڑ گئی اور اس کا پیٹ پھولنے لگا۔ اسکے باوجود ہمارے وہم و گمان میں یہ خیال نہیں آیا کہ یہ ایک ایسی بیماری نکلے گی جس سے اس کی جان جانے کا خطرہ ہوگا۔ ڈاکٹر کو چیک کروانے کے بعد پتہ چلا کہ اس کا جگر فیل ہو رہا ہے اور ہمارے پاس اسے بچانے کا وقت بہتر کم ہے۔

ہسپتال ایانش کا نیا گھر:

3 سالہ ایانش جگر کی پیدائشی طور پر اس بیماری میں مبتلا تھا جس کی وجہ سے اس کا جگر فیل ہو رہا ہے۔ ایانش کی حالت اتنی سنگین ہے کہ وہ ابھی آئی سی یو میں داخل ہے، وہ اپنے جسم کو حرکت دینے سے بھی قاصر ہے کیونکہ اسے ناقابل برداشت تکلیف ہے۔ اب وہ سوئیوں کا اتنا عادی ہو چکا ہے کہ جب اسے انجکشن لگتا ہے تو وہ مزاحمت بھی نہیں کرتا۔ ہسپتال میں رہنا اس کا نیا معمول بن گیا ہے۔

اس کے پیٹ میں پانی جمع ہوگیا ہے، جسے بھاری ادویات کے ذریعے بار بار نکالا جا رہا ہے۔ لیکن اس سے بھی اس کی جان نہیں بچائی جا سکتی

لیور ٹرانسپلانٹ واحد حل

اس کے زندہ رہنے کا واحد آپشن جگر کی پیوند کاری ہے جس کی قیمت اسکے والدین برداشت نہیں کر سکتے۔ ایانش کی ماں کہتی ہیں کہ، اپنی بیماری کے باوجود ایانش ہمیشہ بہت باتونی اور شرارتی رہا ہے۔ وہ اپنے بڑے بھائی کے ساتھ کھیلنا پسند کرتا ہے اور بمشکل اس کا ساتھ چھوڑتا ہے۔ وہ ان تمام سالوں میں ٹھیک رہا ہے لیکن پچھلے مہینے، اپنی تیسری سالگرہ کے صرف ایک ہفتے بعد، اسے سانس لینے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑا۔ وہ سانس لینے کے لیے ہانپے گا اور ہم اسے ہسپتال لے گئے۔ ہمیں بتایا گیا کہ اس کا جگر فیل ہو گیا ہے اور وہ ٹرانسپلانٹ کے بغیر نہیں جی پائے گا۔ تب سے لے کر اب تک ہم اس کا علاج کروانے کے لیے ایک جگہ سے دوسری جگہ بھاگ رہے ہیں، لیکن ہم ناکام ہو رہے ہیں۔

ارون اور آرتھی نے علاج کے لیے جو بچت کی تھی وہ اب تک خرچ کر دی ہے، اب ان کے پاس کچھ نہیں بچا۔ وہ اپنے بچے کی ایک ایک سانس کے لیئے دعاگو ہیں۔

Khuda Aulad De To Sehat Mand Day

Discover a variety of News articles on our page, including topics like Khuda Aulad De To Sehat Mand Day and other health issues. Get detailed insights and practical tips for Khuda Aulad De To Sehat Mand Day to help you on your journey to a healthier life. Our easy-to-read content keeps you informed and empowered as you work towards a better lifestyle.

By Salwa  |   In News  |   0 Comments   |   1880 Views   |   14 Dec 2022
About the Author:

Salwa is a content writer with expertise in publishing news articles with strong academic background. Salwa is dedicated content writer for news and featured content especially food recipes, daily life tips & tricks related topics and currently employed as content writer at kfoods.com.

Related Articles
Top Trending
COMMENTS | ASK QUESTION (Last Updated: 28 May 2024)

خُدا اولاد دے تو صحت مند دے ۔۔ پیدائشی طور پر جگر کی بیماری میں مبتلا بچے کے والدین ہر ایک سانس کے لیئے روتے ہیں

خُدا اولاد دے تو صحت مند دے ۔۔ پیدائشی طور پر جگر کی بیماری میں مبتلا بچے کے والدین ہر ایک سانس کے لیئے روتے ہیں ہر کسی کے لیے جاننا ضروری ہیں کیونکہ یہ ایک اہم معلومات ہے۔ خُدا اولاد دے تو صحت مند دے ۔۔ پیدائشی طور پر جگر کی بیماری میں مبتلا بچے کے والدین ہر ایک سانس کے لیئے روتے ہیں سے متعلق تفصیلی معلومات آپ کو اس آرٹیکل میں بآسانی مل جائے گی۔ ہمارے پیج پر کھانوں، مصالحوں، ادویات، بیماریوں، فیشن، سیلیبریٹیز، ٹپس اینڈ ٹرکس، ہربلسٹ اور مشہور شیف کی بتائی ہوئی ہر قسم کی ٹپ دستیاب ہے۔ مزید لائف ٹپس، صحت، قدرتی اجزاء اور ماڈرن ریمیڈی کے فوڈز میں موجود ہے۔