بچے کی ڈلیوری کے بعد خواتین کے مسائل اور ان کا حل

بچے کی ڈلیوری ایک جانب تو بہت خوشی کا موقع ہوتا ہے مگر اس کو جنم دینے والی ماں کے لیے یہ وقت خوشی کے ساتھ ساتھ بہت سارے مسائل کا بھی ہوتا ہے جن کا سامنا اسے کرنا پڑتا ہے- اور اگر ان مسائل کی جانب مناسب انداز میں توجہ نہ کی جائے تو یہ عمر بھر کا عذاب بن جاتے ہیں ۔ بچے کی ڈلیوری کے بعد کی حالت کو پوسٹ پارٹم حالت کہا جاتا ہے جس میں ایک ماں بہت سارے جسمانی اور نفسیاتی مسائل کا سامنا کرتی ہے-

جسمانی مسائل :
بچے کی پیدائش کے بعد ماں کو قبض ۔ چھاتیوں میں سختی اور سوجن کی شکایت ۔ شدید سردی اور گرمی کا لگنا ، پیشاب میں جلن اور وزن کی کمی کی شکایت لاحق ہو سکتی ہے-

نفسیاتی مسائل :
بچے کی پیدائش میں ہارمون میں بہت زیادہ تکلیف واقع ہوتی ہے جس کے باعث ماں کے مزاج پر بھی اثر پڑتا ہے اور وہ جزباتیت ، خودساختہ اداسی ، سستی اور ڈپریشن کا شکار ہو سکتی ہے- اور ایسا ہر دسویں عورت کے ساتھ ہوتا ہے- یہ عورتوں کی زندگی کا بہت نازک دور ہوتا ہے اس لیۓ اس کو سمجھنے اور اس کے ساتھ دینے کی ضرورت ہوتی ہے-

زچگی کے عمل کے بعد کی جانے والی احتیاطیں
بچے کی پیدائش کے بعد ہر معاشرے میں ہی خواتین کی خصوصی دیکھ بھال کی جاتی ہے اور یہ اس کی صحت اور زندگی کے لیے بہت ضروری ہوتی ہے- لہٰذا آج ہم آپ اس حوالے سے کی جانے والی کچھ احتیاطوں کے بارے میں بتائيں گے-

1: کپڑے کے بجائے پیڈز کا استعمال کریں
زچگی کے بعد خواتین کے لیے اپنی صفائی کا خیال رکھنا بہت ضروری ہوتا ہے- اس لیے اس دوران ان کو کپڑے کے بجائے پیڈز کا استعمال کرنا چاہیے تاکہ کسی بھی اندرونی انفیکشن سے محفوظ رہ سکیں-

2: صفائی کے لیے نیم گرم پانی کا استعمال کریں
اس حالت میں صفائی کے لیے ٹھنڈے پانی کے بجائے نیم گرم پانی کا استعمال کریں اس سے آپ کے اندرونی اعضا کو ٹکور ملتی ہے اور زچگی کے دوران ہونے والے دردوں سے افاقہ ہوتا ہے-

3: ڈھیر سارا آرام کریں
اس حالت میں جبکہ بچے کی ذمہ داریاں بہت زیادہ ہوتی ہیں اور بچے کو ہر تین گھنٹے کے بعد دودھ پلانا ہوتا ہے- اس کے ساتھ ساتھ اس کی صفائی اور دیگر معاملات کی ذمہ داری بھی ماں پر ہوتی ہے تو اس کے لیے آرام بہت ضروری ہوتا ہے ۔ اس لیے یہ اصول بنا لیں کہ جیسے ہی بچہ سوئے آپ بھی اپنی نیند پوری کریں اور اس وقت کو کسی بھی کام میں ضائع نہ کریں کیوںکہ یہ آپ کی صحت کی ریکوری کا ٹائم ہے-

4: اچھی اور متوازن غذا کا استعمال کریں
یہ وقت ڈائٹنگ کا نہیں ہے اس لیے وزن کے بڑھنے کا بہانہ بنا کر کھانے پینے سے انکار مت کریں- کیوں کہ بچے کی پیدائش کے سبب جسم اندرونی طور پر بہت ساری کمزوریوں کا سامنا کر رہا ہے جن کو بہترین غذا کے ذریعے ہی پورا کیا جا سکتا ہے- اس کے علاوہ چونکہ بچہ تو دودھ کی صورت میں اپنی ضرورت آپ کے جسم سے پوری کر رہا ہے اس لیے اس کو صحت مند دودھ دینے کے لےۓ آپ کو بھی بہترین غذا کی ضرورت ہے جس میں مناسب مقدار میں پروٹین ، فیٹ اور کاربوہائیڈریٹ کی موجودگی لازمی ہے-

5: مناسب مقدار میں پانی پیئيں
اس حالت میں پانی کی مناسب مقدار کا لینا بہت ضروری ہے اور اگر پانی کی مقدار کم لی جائے گی تو اس کے سبب قبض کی شکایت بھی لاحق ہو سکتی ہے- اس کے علاوہ بچے کو دودھ پلانے والی ماؤں کے جسم سے دودھ کی صورت میں ایک بڑی مقدار خارج ہو رہی ہوتی ہے- اس لیے کم پانی لینے کی صورت میں دودھ میں بھی کمی واقع ہو سکتی ہے-

6: ہلکی پھلکی ورزش لازمی کریں
زچگی کی حالت کے بعد جسم کے اعضا کو دوبارہ سے فعال کرنے کے لیے ہلکی پھلکی ورزش جسمانی اور نفسیاتی دونوں حوالوں سے بہت مفید ثابت ہوتی ہے اس لیے خواتین کو چاہیے کہ اس حالت میں لازمی طور پر دن کا کچھ حصہ ورزش کے لیے ضرور نکالیں-

By Aqib Shahzad    |    In Health and Fitness   |    0 Comments    |    801 Views    |    30 Jul 2020

Comments/Ask Question

Read Blog about بچے کی ڈلیوری کے بعد خواتین کے مسائل اور ان کا حل and health & fitness, step by step recipes, Beauty & skin care and other related topics with sample homemade solution. Here is variety of health benefits, home-based natural remedies. Find (بچے کی ڈلیوری کے بعد خواتین کے مسائل اور ان کا حل) and how to utilize other natural ingredients to cure diseases, easy recipes, and other information related to food from KFoods.