مجھے ان کے پڑھانے کا انداز اچھا لگا اس لئے شادی کی پیشکش کی.. 20 سال کی لڑکی اور 52 سال کا آدمی! شادی کی انوکھی کہانی

"میں نے ہی ان کو شادی کی پیشکش کی تھی کیونکہ ان کا پڑھانے کا انداز اور شخصیت بہت اچھی لگتی تھی جس کی وجہ سے مجھے ان سے محبت ہوگئی"

یہ کہنا ہے 20 سالہ زویا نور کا جنھیں اپنے استاد ساجد علی سے محبت ہوگئی اور دونوں نے عمروں کے فرق کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے شادی کرلی۔

پہلے شادی کو منع کیا لیکن پھر

زویا اور ساجد نے مشہور یوٹیوبر سید باسط علی کو انٹرویو دیتے ہوئے بتایا کہ زویا بی کام کی طالبہ تھیں اور ایک دن انھوں نے چھٹی کی اور اپنے استاد کو یہ بتانے گئیں کہ وہ انھیں پسند کرتی ہیں اور شادی کرنا چاہتی ہیں جس پر ساجد علی نے ان کی پیشکش کو فوراً مسترد کردیا کیونکہ ان کا ماننا تھا کہ یہ لڑکی ان سے عمر میں بہت چھوٹی ہے مگر رفتہ رفتہ انھیں بھی زویا پسند آگئیں اور انھوں نے زویا کی والدہ کے پاس رشتہ بھجوایا۔

کم عمر ہیں لیکن اچھی بیوی ہیں

ساجد علی کہتے ہیں کہ زویا کی والدہ نے بھی پہلے انکار کیا لیکن بعد میں وہ مان گئیں۔ زویا اگرچہ کم عمر ہیں لیکن ایک اچھی بیوی ثابت ہورہی ہیں جبکہ ساجد بھی ان کا بہت خیال رکھتے ہیں۔

دونوں مل کر لاکھوں کماتے ہیں

شادی کے بعد زویا اور ناصر نے ایمازون پر کام کرنے کی تربیت لی اور اب دونوں لاکھوں کما رہے ہیں۔

By Khush Bakht  |   In News  |   0 Comments   |   22787 Views   |   05 Nov 2022
Related Articles
Top Trending
Comments/Ask Question

Read Blog about مجھے ان کے پڑھانے کا انداز اچھا لگا اس لئے شادی کی پیشکش کی.. 20 سال کی لڑکی اور 52 سال کا آدمی! شادی کی انوکھی کہانی and health & fitness, step by step recipes, Beauty & skin care and other related topics with sample homemade solution. Here is variety of health benefits, home-based natural remedies. Find (مجھے ان کے پڑھانے کا انداز اچھا لگا اس لئے شادی کی پیشکش کی.. 20 سال کی لڑکی اور 52 سال کا آدمی! شادی کی انوکھی کہانی) and how to utilize other natural ingredients to cure diseases, easy recipes, and other information related to food from KFoods.