کیا آپ بھی اپنے چہرے پردہی کا استعمال بہت زیادہ کرتے ہیں تو بغیر سوچے سمجھے اس کے استعمال کے نقصانات جان لیجئے۔

جلد پر دہی لگانے سے بہت سے فوائد حاصل ہوتے ہیں۔ اور اکثر بیوٹی ایکسپرٹ دہی سے چہرے کا مساج کرنے کا مشورہ دیتی ہیں تاہم کسی بھی چیز کی کمی یا زیادتی نقصان دہ ہوتی ہے اسی طرح زیادہ مقدار میں دہی لگانے سے جلد کو کچھ نقصان بھی ہو سکتا ہے۔ آئیے اس بارے میں جانتے ہیں-
ہم میں سے بہت سے لوگ جلد کی خوبصورتی بڑھانے کے لیے دہی کا استعمال کرتے ہیں۔ اس سے آپ کی جلد کی چمک بڑھ جاتی ہے۔ اس کے ساتھ یہ جلد کی رنگت کو بھی نکھارتا ہے لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ دہی کو زیادہ مقدار میں چہرے پر لگانے سے جلد کو نقصان بھی پہنچ سکتا ہے۔ اس کے ساتھ کچھ لوگوں کو دہی سے بھی الرجی ہوتی ہے جس کی وجہ سے ان کی جلد پر کئی مسائل پیدا ہوسکتے ہیں۔ اگر آپ بھی چہرے پر دہی لگانے کا سوچ رہے ہیں تو ایک بار پیچ ٹیسٹ ضرور کریں۔ آئیے جانتے ہیں چہرے پر دہی لگانے کے کیا مضر اثرات ہوتے ہیں؟

چہرے پر دہی کے مضراثرات

دہی کو زیادہ مقدار میں چہرے پر لگانے سے جلد کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔ اس کے علاوہ اگر آپ کو اس سے الرجی ہے تو جلد پر کئی مسائل پیدا ہوسکتے ہیں۔ اس لیے دہی لگانے سے پہلے کچھ باتوں کا خیال رکھیں۔ آئیے اس بارے میں جانتے ہیں کہ یہ کس قسم کی جلد کو نقصان پہنچا سکتا ہے۔

جلد کو چکنا بنائے:

اگر آپ چہرے پر بہت زیادہ دہی لگاتے ہیں تو یہ آپ کی جلد کو آئلی بنا سکتا ہے۔ اس کے ساتھ ہی تیل والی جلد والوں کو بھی اپنی جلد پر براہ راست دہی کا استعمال نہیں کرنا چاہیے۔ یہ جلد کو زیادہ تیل والا(آئلی) بنا سکتا ہے۔ اس لیے اگر آپ کی جلد آئلی ہے تو جویا آٹے کے ساتھ دہی کا پیسٹ لگائیں۔ یہ آپ کی جلد کو دہی کے آئل کو زیادہ جذب کرنے سے روکے گا۔

ایکنی اور مہاسوں کے مسائل:

چہرے پر دہی لگانے سے آپ کی جلد آئلی ہوجاتی ہے۔ جلد پر تیل کا زیادہ ہونا ایکنی اورمہاسوں کا باعث بن سکتا ہے۔ اس لیے کوشش کریں کہ چہرے پر دہی کو محدود مقدار میں یا ہفتے میں صرف 1 سے 2 بار لگائیں۔ تاکہ آپ کی جلد پر ایکنی اورمہاسوں کا مسئلہ نہ ہو۔

سرخی اور خارش:

اگر آپ کو دہی سے الرجی ہے تو جلد پر دہی کا استعمال نہ کریں۔ دراصل، جب آپ چہرے پر دہی لگاتے ہیں تو اس سے الرجی ہونے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔ ایسی حالت میں جلد پر خارش، اور سرخی کے مسائل ہو سکتے ہیں۔ اس لیے جلد پر دہی لگانے سے پہلے کسی ماہر سے مشورہ کریں۔

حساس جلد:

اگر سب کچھ آپ کی جلد کے مطابق نہیں ہے، تو دہی لگانے سے پہلے پیچ ٹیسٹ کریں۔ کچھ لوگوں کے لیے دہی بھی جلد پر مسائل پیدا کر سکتا ہے۔ خاص طور پر اگر آپ کی جلد حساس ہے تو آپ کو دہی لگانے سے دانے، خارش جیسے مسائل ہوسکتے ہیں۔ کیونکہ حساس جلد والوں کی جلد کوئی بھی چیز جلدی قبول نہیں کرتی اس لئے خاص طور پر کہیں باہر جاتے ہوئے تو یہ تجربہ اپنی جلد پر ہرگز نہ کریں۔

رنگت متاثر ہو سکتی ہے:

جلد پر زیادہ دہی لگانے سے جلد کی رنگت بھی متاثر ہوتی ہے۔ درحقیقت، دہی میں تیل کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے۔ ایسی صورت حال میں جلد پر بہت زیادہ تیل کی وجہ سے جلد کا رنگ دھندلا ہونے لگتا ہے۔ اس صورت میں آپ کی جلد کا رنگ پھیکا پڑ سکتا ہے۔ اس صورتحال سے بچنے کے لیے چہرے پر ہفتے میں صرف 1 سے 2 بار دہی لگائیں۔ اگر دہی کو جلد پر ٹھیک طرح سے نہ لگایا جائے تو اس سے جلد کی رنگت بھی متاثر ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ، یہ جلد کے لیے کئی طریقوں سے نقصان دہ ہو سکتا ہے۔ تاہم، یہ بات ذہن میں رکھیں کہ یہ مسئلہ ضروری نہیں کہ ہر کسی کو ہو۔ اس کے ساتھ ساتھ اگر آپ کی جلد حساس ہے تو دہی لگانے سے پہلے کسی ماہر سے ضرور مشورہ کریں۔

By Afshan    |    In Health and Fitness   |    0 Comments    |    478 Views    |    24 Jun 2022

Related Articles

Comments/Ask Question

Read Blog about کیا آپ بھی اپنے چہرے پردہی کا استعمال بہت زیادہ کرتے ہیں تو بغیر سوچے سمجھے اس کے استعمال کے نقصانات جان لیجئے۔ and health & fitness, step by step recipes, Beauty & skin care and other related topics with sample homemade solution. Here is variety of health benefits, home-based natural remedies. Find (کیا آپ بھی اپنے چہرے پردہی کا استعمال بہت زیادہ کرتے ہیں تو بغیر سوچے سمجھے اس کے استعمال کے نقصانات جان لیجئے۔) and how to utilize other natural ingredients to cure diseases, easy recipes, and other information related to food from KFoods.