اگر آپ بھی اِن علامات کا شکار ہیں تو پہلی فرصت میں شوگر ٹیسٹ کروائیں

شوگر کی بیماری کو دوسرے الفاظ میں اب زہریلا پن کی بیماری بھی کہا جاتا ہے ۔ اس جدید دور میں اب غذا اور شکر ایک زہر بن چکے ہیں جس کی بڑی وجہ روزمرہ زندگی میں غیر متوازن غذا اور ورزش کی کمی ہے ۔
یہ ایک آفاقی اصول ہے کہ ہر چیز کی زیادتی بُری ہوتی ہے ۔ لیکن لوگ اس اصول کو بھلا چکے ہیں ۔ ماڈرن فاسٹ فوڈزاور مشروبات نے رہی سہی کسر بھی پوری کر دی ہے ۔ پرانے زمانے میں لوگ سادہ پانی کا استعمال زیادہ کرتے تھے لیکن اب ہر عمر کے لوگ کولا کلچر سے متاثر ہیں ۔ایک عام کولا کی بوتل میں سولہ چینی کے چمچے کے برابر توانائی ہوتی ہے ۔ نام نہاد ڈائٹ مشروبات میں بھی بے پناہ کیمیکل ہیں جن کے بُرے اثرات کے بارے میں تاحال معلومات کی کمی ہے ۔
شوگر کی علامات :
تھکن کا احساس
پیاس کی شدت
پیشاب کی زیادتی
پیٹ کا درد اور قے
بھوک کی کمی
وزن کا گرنا ، خارش ہونا
زخم کا جلد مندمل نہ ہونا

شوگر کی بیماری کی دو قسمیں ہوتی ہیں

۱۔ وراثتی :
یہ بیماری عموماً بچوں میں پائی جاتی ہے اور اس کی وجہ انسولین اور انسولین بنانے والے خلیات کی کمی ہے ۔ عام طور پر ڈاکٹر اس کی تشخیص جلد ہی کر لیتے ہیں اور انسولین کے ذریعے علاج بروقت شروع کردیا جاتا ہے ۔ اس طریقہ علاج سے مریض جلد صحت یاب ہوجاتے ہیں اور مستقبل میں دیگر پیچیدگیوں سے بھی بچ جاتے ہیں ۔

۲۔ ماحول اور بڑی عمر کے اثرات
غذا کی زیادتی اور ورزش کی کمی پوری دنیا میں شوگر کی بیماری پھیلنے کی سب سے بڑی وجہ ہیں ۔ حیرت کی بات یہ ہے کہ بالغ لوگوں میں انسولین کی کمی نہیں ہوتی بلکہ کبھی کبھی زیادتی ہوتی ہے ۔
مسئلہ سار ا پٹھوں کو استعمال کرکے اور انسولین کے ذریعے شکر اور غذا کو چلا جائے تاکہ وہ جسم میں جمع نہ ہو۔ تقریباً پچیس سال قبل یہ بیماری اچانک ایک وباء کی شکل اختیار کر گئی تھی اس کی بڑی وجہ شہری زندگی کے معمولات میں غیر معمولی تبدیلیاں تھیں ۔ جدید آلات کی ایجاد نے جہاں انسانی زندگی کو آسان بنادیا وہاں لو گ جسمانی آسانی کا شکار ہونے لگے اور جسمانی مشقت سے دور ہوتے چلے گئے ۔ مرغن اور بھاری بھرکم غذاؤں کے کھانے سے جسم کو توانائی یا انرجی تو زیادہ ملنے لگی لیکن کسرت کی کمی کی وجہ سے فالتو توانائی ، چربی کی شکل میں جمع ہونے لگی جو خون کی شریانوں میں جمنے لگے ۔ درحقیقت شوگر شریانوں کی بیماری ہے ۔ جسم میں ہر جگہ خون شکر آلودہ شکل میں جاتا ہے جو جسم کے ہر حصے کے خلیات کو تباہ اور برباد کردیتا ہے ۔

شوگر کی بیماری سے مندرجہ ذیل بیماریاں لاحق ہوجاتی ہیں

آنکھوں کی شریانوں کی بیماریاں
آنکھوں کی شریانوں میں شکر کی زیادتی کا اثر یہ ہوتا ہے چھوٹی شریانیں پھٹ جاتی ہیں اور آنکھ کے اندر خون جمع ہونے سے نظرکے ضائع ہونے کا خطرہ ہوتا ہے ۔

دانت اور مسوڑھوں کی بیماریاں :
دانتوں اور مسوڑھوں میں موجود جراثیم کی محبوب غذا شکر ہوتی ہے جو خون کی نالیوں میں وافر مقدار میں ملتی رہتی ہے اسی لئے یہ وہاں اپنا گھر بنا لیتے ہیں اور خاص طور پر بڑی عمر کے لوگوں کی صحت پر اثرانداز ہوتے ہیں ۔

دل کی شریانوں کی بیماریاں:
جسم میں چربی کی اضافی مقدار، بُرے کولیسٹرول کی زیادتی اور خون میں شکر کی فراوانی ، شریانوں اور خاص طور پر دل کی شریانوں کو بند کرنا شروع کر دیتی ہے جس سے بلڈ پریشر ہائی ہوجاتا ہے جو آگے چل کر دل کی بیماریوں کا باعث بنتا ہے ۔

گردے کی شریانوں کی بیماریاں :
گردے کی شریانیں بھی شکر اور خون کے گاڑھے ہونے سے متاثر ہونے لگتی ہیں اور بالآخر گردے ناکارہ ہوجاتے ہیں ۔

پاؤں کی بیماریاں :
شوگر کے مریض عام طور پر پاؤں کے درد کے بارے میں بہت شکایات کرتے ہیں ۔ اس تکلیف سے بچنے کا بہترین طریقہ ورزش اور روزانہ چہل قدمی ہے ۔ اچھی دوائیں اب دستیاب ہیں ۔ا س سلسلے میں اپنے ڈاکٹر سے بات کریں لیکن ہمارا مشورہ یہ ہے کہ ورزش کا سائیکل کا استعمال ایک بہترین نسخہ ہے ۔

By Aqib Shahzad    |    In Health and Fitness   |    0 Comments    |    680 Views    |    22 Feb 2021

Comments/Ask Question

Read Blog about اگر آپ بھی اِن علامات کا شکار ہیں تو پہلی فرصت میں شوگر ٹیسٹ کروائیں and health & fitness, step by step recipes, Beauty & skin care and other related topics with sample homemade solution. Here is variety of health benefits, home-based natural remedies. Find (اگر آپ بھی اِن علامات کا شکار ہیں تو پہلی فرصت میں شوگر ٹیسٹ کروائیں) and how to utilize other natural ingredients to cure diseases, easy recipes, and other information related to food from KFoods.