" فٹ ہونے کے باوجود میرا بی پی ہائی کیوں ہے؟" ماہرین کے نزدیک فٹ اور صحت مند افراد ہائی بلڈ پریشر کا شکار کیوں ہوتے ہیں؟

ہائی بلڈ پریشر دنیا بھرمیں قبل از وقت اموات کی ایک بڑی وجہ ہے۔ ہائی بلڈ پریشربرسوں تک بغیرکسی ظاہری علامت کے خاموش بیٹھ سکتا ہے۔ غیرکنٹرول شدہ بلڈ پریشردل کے دورے اور فالج کے خطرے والے عوامل میں سے ایک ہے، ہم نے ماضی قریب میں بہت سی مشہور شخصیات کے بارے میں سنا ہے کہ وہ دل کے دورے کا شکار ہو گئے ہیں - وہ سبھی فٹ اور فعال ہیں۔ لیکن اکثر فٹ اور ایکٹو افراد بھی دل کا دورہ پڑنے سے جاں بحق ہوجاتے ہیں، اس کی وجہ یہی ہے کہ ان کو بلڈ پریشرکی بیماری ہوتی ہے اور انہیں پتہ نہیں ہوتا۔

ہائی بلڈ پریشر کو 'خاموش قاتل' کیوں کہا جاتا ہے؟

"اسٹینفورڈ کے محققین نے ہائی اسکول، کالج اور پیشہ ور کھلاڑیوں میں سے ایک تہائی ایسے پائے جن کی اسکریننگ کی گئی تھی، جن کو ہائی بلڈ پریشر تھا۔ یہ لوگ جوان اور فٹ ہیں، کچھ لوگوں کو اس وقت سر میں درد ہوتا ہے جب ان کا بلڈ پریشرخطرناک حد تک بڑھ جاتا ہے، لیکن دوسروں میں، ہائی بلڈ پریشر کا اس وقت تک پتہ نہیں چل سکتا جب تک کہ یہ جان لیوا ہارٹ اٹیک کا سبب نہ بن جائے۔"ہائی بی پی اکثر ان لوگوں میں تشخیص نہیں ہوتا جو عام طور پر چھوٹے ہوتے ہیں، سالانہ ہیلتھ چیک اپ نہیں کرواتے، مصروف طرز زندگی، ورزش کی کمی اور نیند کی کمی۔ یہ مریض پھر سانس لینے میں دشواری، یا ہائی بلڈ پریشر یا دل کی بیماریوں کے ساتھ ہسپتال میں داخل ہوتے ہیں۔"

فٹ اور فعال لوگوں کو ہائی بلڈ پریشر کیوں ہوتا ہے؟

جب ہائی بلڈ پریشر کی بات آتی ہے تو بہت سارے عوامل اس کی وجہ بنتے ہیں، مثال کے طور پرخاندانی یا ورثے میں ملتا ہے، جسمانی ساخت اور خوراک ۔ ان میں سے کچھ وجوہات کو روکا نہیں جا سکتا، جیسا کہ ورثہ اور عمر۔ ہائی بلڈ پریشر اکثر خاندانوں میں چلتا ہے۔ عمر بڑھنے کے ساتھ سیسٹولک بلڈ پریشر (سب سے اوپر نمبر) اور دل کی بیماری کے خطرے میں عالمگیر اضافہ ہوتا ہے۔ دوسری طرف، ہائی بلڈ پریشر کے لیے کم خطرے والے عوامل سے نمٹنا، مثال کے طور پر، وزن کم کرنا اور زیادہ ورزش کرنا، اکثر بڑے فائدے پیدا کرتا ہے۔ لہذا اگر آپ کو معلوم ہوتا ہے کہ آپ کو ہائی بلڈ پریشر ہے، سب سے اہم اس تشخیص کو قبول کرنا ہے۔ ہائی بلڈ پریشر خود علاج نہیں کر سکتا؛ آپ کا عزم بلڈ پریشر کو کنٹرول کرنے کی طرف پہلا قدم ہے۔

باقاعدگی سے چیک اپ اہم ہے:

ڈاکٹر ہر ایک کے لیے بلڈ پریشر اور شوگرٹیسٹ تجویز کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ ای سی جی، ای سی ایچ او، سی بی سی، کے ایف ٹی، ایل ایف ٹی، لیپڈ پروفائل، فاسٹنگ بلڈ شوگر، یورین روٹین اور آنکھوں کا معائنہ ضروری ہے۔
کارڈیک اسکریننگ ٹیسٹ سال میں ایک بار یا 40 سال کی عمر کے بعد یا 30 سال کی عمر کے بعد 2 سال میں ایک بار کرنے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔
ہائی بلڈ پریشر والے بہت کم لوگ سر درد، سانس لینے میں دشواری یا ناک سے خون بہنے جیسی علامات ظاہر کرتے ہیں، لیکن یہ علامات مخصوص نہیں ہیں اور عام طور پر تب ہوتی ہیں جب بلڈ پریشرخطرناک ترین سطح تک پہنچ جاتا ہے۔

کیسے جانیں کہ آپ کا طرز زندگی واقعی اچھا ہے؟

جب آپ کی غذا اور طرز زندگی کی بات آتی ہے تو آپ کو یہ چیزیں ذہن میں رکھنی چاہئیں کہ:

زیادہ نمک والی غذا سے پرہیز کریں۔

خوراک میں بہت زیادہ سوڈیم، ہائی بلڈ پریشر، دل کی بیماری اور فالج کا باعث بن سکتا ہے۔زیادہ تر ہمارے افراد روزانہ کم از کم 1.5 چائے کے چمچ نمک، یا تقریباً 3400 ملی گرام سوڈیم کھاتے ہیں، جس میں ہمارے جسم کی ضرورت سے کہیں زیادہ مقدار ہوتی ہے۔ وقت گزرنے کے ساتھ، نمک کا زیادہ استعمال ہائی بلڈ پریشرکا باعث بن سکتا ہے، جو خون کی نالیوں کو سخت اور تنگ کرتا ہے۔ نمک کو کم کرنا آپ کے بلڈ پریشر کو کم کرنے کے آسان ترین طریقوں میں سے ایک ہے، اور بہت جلد فرق آنا شروع ہو جائے گا۔

ریفائنڈ تیل اور استعمال شدہ تیل دوبارہ استعمال کرنے سے گریز کریں:

سیاہ تیل میں پکایا جانے والا سٹریٹ فوڈ جسے دن بھر استعمال اور بار بار گرم کیا جاتا ہے، جسم میں ایل ڈی ایل یا خراب کولیسٹرول کی سطح کو بڑھا سکتا ہے۔ ایل ڈی ایل کولیسٹرول کی زیادہ مقدار دل کی بیماری، فالج اور سینے میں درد کے خطرات کو بڑھا سکتی ہے۔ کولیسٹرول سے متعلق مسائل سے بچنے کے لیے کوکنگ آئل کو دوبارہ استعمال کرنے سے گریز کریں۔ اس کے علاوہ ہمارے گھروں میں عام طور پر استعمال ہونے والا تیل ریفائنڈ آئل ہے جو قدرتی تیل کی پراسیس شدہ شکل ہے، قدرتی تیل کو متعدد کیمیکلز سے ٹریٹ کرنے کے بعد حاصل کیا جاتا ہے اس لئے ریفائنڈ تیل کا باقاعدہ استعمال کینسر، ذیابیطس، معدے کی بیماری، ایتھروسکلروسیس، موٹاپا، تولیدی مسائل، اور مدافعتی کمزوری کا باعث بن سکتا ہے۔

ضرورت سے زیادہ پروٹین کا استعمال نہ کریں:

یہ واضح ہے کہ غذا میں "بہت زیادہ اچھی چیز" صحت مند افراد کے لیے بیکار یا نقصان دہ بھی ہو سکتی ہے۔ بہت سے بالغ یا یہاں تک کہ نوعمر (خاص طور پر کھلاڑی یا باڈی بلڈرز) پروٹین سپلیمنٹس خود تجویز کرتے ہیں اور ان کے استعمال کے خطرات کو نظر انداز کرتے ہیں، اضافی پروٹین کا جسم مؤثر طریقے سے استعمال نہیں کرتا اور ہڈیوں، گردوں اور جگر پر میٹابولک بوجھ ڈال سکتا ہے۔ مزید یہ کہ، زیادہ پروٹین/ زیادہ گوشت والی غذائیں، سیرشدہ چکنائی اور کولیسٹرول کی وجہ سے دل کی بیماری کے بڑھتے ہوئے خطرے سے بھی منسلک ہو سکتی ہیں۔

آرام کرنا سیکھیں:

اپنے کاموں کی بھاگ دوڑ میں ہم اکثر آرام کی ضروریات کے بارے میں جسم کے اشاروں کو نظر انداز کر دیتے ہیں۔ جب آپ بیمار ہوں تو ورزش کرنے سے پانی کی کمی کا خطرہ بڑھ جاتا ہے اور آپ کی حالت مزید خراب ہو سکتی ہے۔ اسی لئے کبھی کبھاراپنے جسم کی ضرورت کو بھی دیکھنا اور سمجھنا چاہیے۔

By Afshan    |    In Health and Fitness   |    0 Comments    |    2748 Views    |    24 Aug 2022

Related Articles

Comments/Ask Question

Read Blog about " فٹ ہونے کے باوجود میرا بی پی ہائی کیوں ہے؟" ماہرین کے نزدیک فٹ اور صحت مند افراد ہائی بلڈ پریشر کا شکار کیوں ہوتے ہیں؟ and health & fitness, step by step recipes, Beauty & skin care and other related topics with sample homemade solution. Here is variety of health benefits, home-based natural remedies. Find (" فٹ ہونے کے باوجود میرا بی پی ہائی کیوں ہے؟" ماہرین کے نزدیک فٹ اور صحت مند افراد ہائی بلڈ پریشر کا شکار کیوں ہوتے ہیں؟) and how to utilize other natural ingredients to cure diseases, easy recipes, and other information related to food from KFoods.