بچہ مرنے سے پہلے نیلے یا کالے رنگ کا ہوجاتا ہے یا پیدا ہونے سے پہلے یا کچھ گھنٹوں بعد مرجاتا ہے، یہ کون سی بیماری ہے اور اس کا علاج کیا ہے؟ ڈاکٹر عیسٰی کا نسخہ

اٹھرا کیا ہے؟

اٹھرا وہ بیماری ہے جس میں بچہ پیدا ہونے کے کچھ منٹ بعد کچھ گھنٹوں بعد یا کچھ ہفتوں بعد مرجاتا ہے ۔

علامات

بچے کا مرنے سے پہلے رنگ تبدیل ہوجاتا ہے۔
بچہ نیلے یا کالے رنگ کا ہو جاتا ہے۔
بچے کے ناخن سبز یا نیلے رنگ میں تبدیل ہوجاتے ہیں ۔
اٹھرا کیا چیز ہے نہ تو یہ سائے کا مسئلہ ہے نہ ہی جادو کچھ پیر یا تعویز کرنے والے ایسا کہتے ہیں ایسا کچھ نہیں بلکہ یہ ایک خونی بیماری ہے۔ ماں کے خون اور جسم میں زہریلے مادے اور فاسد اجزاء کی زیادتی ہے جو بچے کو ماں کے پیٹ میں خوراک کے ذریعے منتقل ہوتے رہتے ہیں۔ جب بچہ پیدائش کے بعد بیرونی ماحول میں آتا ہے تو اس میں اتنی طاقت نہیں ہوتی کہ وہ ان کے خلاف لڑسکے اس طرح بچہ کے وجود میں فاسد اجزاء کے بڑھ جانے سے موت واقع ہوتی ہے ایک اور بھی وجہ ہے ماں کے دودھ کا کڑوا پن جو انہی زہریلے اجزاء کی وجہ سے ہوتا ہے .اس دودھ کو پینے سے بھی بچہ مرجاتا ہے۔ جن خواتین کے بچے اس بیماری کی وجہ سے مر جاتے ہیں ان کے لئے ان کے گھر میں بھی جگہ تنگ کر دی جاتی ہے۔کوئی یہ نہیں سوچتا کہ ماں کے اپنے دل پر کیا گزر رہی ہے۔ بچے کی موت کا ذمہ دار اسی کو ٹہرایا جارہا ہوتا ہے۔
حمل کے دوران یقین کے ساتھ دوا کھلانے کی بجائے پیسے اور کوشش ضائع جانے کے خیال کے ساتھ مارے باندھے دوا کھلائی جاتی ہے۔ ڈاکٹر سے ملنا اور اس پر اٹھنے والے اخراجات انتہائی بُرے لگتے ہیں اور دنیا کی زہریلی زبانوں کا زہر ہر لمحہ زوجین کو ڈستا رہتا ہے۔ ایسی صورت میں خاتون کے جسمانی علاج کے ساتھ ساتھ زوجین کے نفسیاتی علاج کی بھی ضرورت پڑتی ہے۔ ’اٹھرا‘کا الزام عورت کو زندہ درگور کرنے کے مترادف ہے۔ ایک طرف ایسی عورت بے بس ماں ہوتی ہے جس کا حمل پیش رفت نہیں کرتا یا اس کا بچہ پیدائش کے بعد اللہ تعالیٰ کو پیارا ہو جاتا ہے۔ حکیمی تشریح کے مطابق ایسی عورت جس کا بچہ دورانِ حمل سے لے کر عمر کے پہلے آٹھ سال کے دوران میں وفات پا جائے اسے ’اٹھرا‘ کی مریضہ کہا جاتا ہے۔ ایسی خاتون کو بد نصیب ،منحوس اور جنات کے سایہ سے متاثر مانا جاتا ہے۔ جبکہ ایسا کچھ نہیں یہ بیماری ہے اور اس کا علاج حکیمی اور ڈاکٹری دونوں جگہ موجود ہے۔
اگرآپ کے آس پاس یا آپ کو اس قسم کی کسی مسئلے کا سامنا ہے تو اس کا مکمل علاج ضروری ہے۔ یہاں ہم ڈاکٹر عیسٰی کا ایک نسخہ لے کر آئے ہیں جو اسی بیماری کے لئے ہے۔ یہ حمل ٹہرنے سے پہلے سے استعمال کیا جائے اور اس کے بعد تک استعمال کریں تو اللہ رب العزت نے چاہا تو بچہ صحت مند پیدا ہو گا ۔ لیکن اس کے ساتھ ساتھ دعا اور ماں کی غذا کا اور صحت کا پورا خیال رکھا جانا چاہیے۔

چاکسو 25 گرام
نرکچور 25 گرام
ریونڈ خطائی 25 گرام
فلفل دراز 25 گرام
نیم کے پتے 25 گرام

ان تمام چیزوں کو ملا کر پاؤڈر بنا لیں۔ یہ آپ کی دوا تیار ہوگئی۔ یہ دوا دن میں کسی بھی وقت کھائی جا سکتی ہے لیکن خیال رہے کہ کھانے کے ایک سے دو گھنٹے کے بعد کھائی جائے۔ دن میں ایک دفعہ اس کو پانی کے ساتھ کھانا ہے۔ وقت آپ کوئی بھی مقرر کر سکتے ہیں۔ یہ دوا کھائیں اور اللہ رب العزت سے اپنے اور اپنے بچے کی صحت کے لئے دعا ضرور کریں۔

By Afshan    |    In Health and Fitness   |    0 Comments    |    1972 Views    |    23 Apr 2022

Related Articles

Comments/Ask Question

Read Blog about بچہ مرنے سے پہلے نیلے یا کالے رنگ کا ہوجاتا ہے یا پیدا ہونے سے پہلے یا کچھ گھنٹوں بعد مرجاتا ہے، یہ کون سی بیماری ہے اور اس کا علاج کیا ہے؟ ڈاکٹر عیسٰی کا نسخہ and health & fitness, step by step recipes, Beauty & skin care and other related topics with sample homemade solution. Here is variety of health benefits, home-based natural remedies. Find (بچہ مرنے سے پہلے نیلے یا کالے رنگ کا ہوجاتا ہے یا پیدا ہونے سے پہلے یا کچھ گھنٹوں بعد مرجاتا ہے، یہ کون سی بیماری ہے اور اس کا علاج کیا ہے؟ ڈاکٹر عیسٰی کا نسخہ ) and how to utilize other natural ingredients to cure diseases, easy recipes, and other information related to food from KFoods.