یورک ایسڈ کا علاج دواؤں سے نہیں غذا سے کیجیئے ۔۔ جانیئے چند ایسے گھریلو نسخے جو یورک ایسڈ سے نجات دلانے میں مددگار ثابت ہو سکتے ہیں

جسم میں یورک ایسڈ بڑھنا ایک عام مسئلہ ہے لیکن اگر یورک ایسڈ بہت زیادہ بڑھ جائے تو آپ کا چلنا پھرنا اُٹھنا بیٹھنا بھی محال ہو سکتا ہے، اکثر لوگوں کا یورک ایسڈ بڑھ رہا ہوتا ہے مگر وہ اس کی طرف توجہ نہیں دیتے اور یوں ان کے جوڑوں میں درد شروع ہو جاتا ہے۔

یورک ایسڈ کیا ہے؟

جسم میں بڑھے ہوئے تیزابی مادوں کو طبی اصطلاح میں یورک ایسڈ کہا جاتا ہے، یورک ایسڈ کی سطح میں مسلسل اضافہ نہ صرف جسم کی چربی بڑھاتا ہے بلکہ آپ کو مستقل طور پر جوڑوں کے درد کا شکار بھی بنا دیتا ہے، یورک ایسڈ بڑھنے کی وجہ سے جوڑوں میں سوزش، جوڑوں میں سوجن اور شدید درد ہوتا ہے۔

یورک ایسڈ کیوں بڑھتا ہے؟

یورک ایسڈ بڑھنے کی وجوہات میں خون کی کمی، موٹاپا، غیر صحت بخش غذاؤں کا استعمال ہوتا ہے، ماہرین کا کہنا ہے کہ سرُخ گوشت کا زیادہ استعمال یورک ایسڈ بڑھا دیتا ہے تاہم اگر چند قدرتی غذاؤں کا استعمال کیا جائے تو یورک ایسڈ کو کم بھی کیا جا سکتا ہے وہ قدرتی غذائیں کون سی ہیں آئیے ہم آپ کوبتاتے ہیں۔

کون سی قدرتی غذاؤں کا استعمال کر کے یورک ایسڈ کم کیا جا سکتا ہے؟

• کیلے

کیلوں میں قدرت نے بے شمار فوائد چھپا رکھے ہیں کیلے جسم میں یورک ایسڈ کی سطح کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں، کیلوں کا استعمال جوڑوں کے درد کا شکار مریضوں کے لئے بہترین ہے یورک ایسڈ کم کرنے لے لئے مسلسل کیلوں کا استعمال سیزن ہونے تک جاری رکھیں، کچھ ہی دنوں میں آپ کے جوڑوں میں واضح بہتری نظر آئے گی درد دور ہو گا اور سوزش بھی کم ہو جائے گی۔

• اسٹرابیری

اسٹرابیری میں وٹامن سی کی وافر مقدار پائی جاتی ہے اسٹرابیری ایک ایسی قدرتی غذا ہے جو جسم میں پائے جانے والے کیمیکل کی بلند سطح کے خلاف مزاحمت کرتی ہے یعنی ایسے مادوں کو ختم کرتی ہے جو جسمانی صحت کے لئے نقصان دہ ثابت ہو سکتے ہیں، یہ چٹخارے دار اسٹرابیری آپ کو یورک ایسڈ سے نجات دلا کر گھٹنوں اور جسم کے تمام جوڑوں کے درد سے چھٹکارا دلا سکتی ہے اس لئے اسٹرابیری کا زیادہ سے زیادہ استعمال کریں اور چکنائی یا سُرخ گوشت کے استعمال سے گریز کریں۔

• سیب

سیب کو قدرت کا خزانہ کہا جائے تو غلط نہ ہوگا، سیب میں میلک ایسڈ کی بھاری مقدار پائی جاتی ہے اور یہ ایسڈ قدرتی طور پر یورک ایسڈ کے اثرات کو بے اثر کرتا ہے اور اس سے پیدا ہونے والے امراض کو بھی دور کرتا ہے، اگر روزانہ ایک عدد سیب کھانے کی عادت بنائی جائے تو نہ صرف یورک ایسڈ کا مسئلہ ختم ہوگا بلکہ صحت کہ دیگر فوائد بھی حاصل ہوں گے وہ کہتے ہیں نہ کہ ایک سیب آپ کو ڈاکٹر سے دور رکھ سکتا ہے۔

• پانی

ہمارے جسم کو سب سے زیادہ ضرورت پانی کی ہوتی ہے اس ہی لئے بار بار یہ بات کہی جاتی ہے کہ پانی زیادہ سے زیادہ پینا چاہیئے ماہرین کے مطابق روزانہ آٹھ گلاس پانی پینا صحت کے لئے بہترین ہے لیکن موسم کے مطابق پانی کا زیادہ استعمال کرنا چاہیئے کیونکہ پانی جسم میں موجود اضافی یورک ایسڈ اور زہریلے مادوں کو خارج کرتا ہے جس سے گنٹھیا سے نجات حاصل ہوتی ہے۔

• دیگر غذائیں

ہر قسم کا ایسا پھل جو سٹرک ایسڈ سے بھرپور یعنی ذائقے میں کھٹا ہو اس تمام کا استعمال یورک ایسڈ سے نجات میں مدد دے سکتا ہے جیسے کہ چیری، لیموں، کینو، انار وغیرہ جبکہ ایسی تمام غذائیں جن میں فائبر کی بھاری مقدار پائی جاتی ہے جسم میں موجود یورک ایسڈ کی بلند سطح کو کم کرنے کے حوالے سے مؤثر ثابت ہوسکتی ہیں۔

By Sadia    |    In Health and Fitness   |    0 Comments    |    1322 Views    |    16 Oct 2021

Comments/Ask Question

Read Blog about یورک ایسڈ کا علاج دواؤں سے نہیں غذا سے کیجیئے ۔۔ جانیئے چند ایسے گھریلو نسخے جو یورک ایسڈ سے نجات دلانے میں مددگار ثابت ہو سکتے ہیں and health & fitness, step by step recipes, Beauty & skin care and other related topics with sample homemade solution. Here is variety of health benefits, home-based natural remedies. Find (یورک ایسڈ کا علاج دواؤں سے نہیں غذا سے کیجیئے ۔۔ جانیئے چند ایسے گھریلو نسخے جو یورک ایسڈ سے نجات دلانے میں مددگار ثابت ہو سکتے ہیں) and how to utilize other natural ingredients to cure diseases, easy recipes, and other information related to food from KFoods.