تھائی رائیڈ کا بڑھتا ہوا مرض ۔۔ تھائی رائیڈ کے مریضوں کو کیا کھانا چاہیے اور کیا نہیں کھانا چاہیے؟

خراب طرز زندگی کی وجہ سے ذیابیطس، تھائی رائیڈ، یورک ایسڈ جیسی بیماریاں بڑھ رہی ہیں۔ کہیں کھانے کی غلط عادات بھی ان بیماریوں کو فروغ دے رہی ہیں۔ ہائپوٹائیرائڈزم میں، تھائیرائڈ آپ کا وزن بڑھاتا ہے۔ یہ ایک ایسی حالت ہے جس میں جسم کافی ہارمونز نہیں بنا پاتا۔ ہائپوتھائیرائیڈزم کے شکار افراد کو تھکاوٹ، بال گرنا، وزن بڑھنا، سردی لگنے جیسی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ تائرواڈ آیوڈین کی کمی کی وجہ سے ہو سکتا ہے۔ اس بیماری سے نجات کے لیے آپ کو اپنے کھانے پینے کا خاص خیال رکھنا ہوگا۔ تو آئیے آپ کو بتاتے ہیں کہ تھائرائیڈ سے نجات کے لیے آپ کو کن غذاؤں کا استعمال کرنا چاہیے اور کن چیزوں سے پرہیز کرنا چاہیے۔

تھائی رائیڈ میں کون سی چیزیں کھائیں:

آپ انڈے کھا سکتے ہیں۔ انڈے کے پیلے حصے میں آئیوڈین اور سیلینیم جبکہ سفید حصے میں پروٹین وافر مقدار میں پایا جاتا ہے۔
آپ ہر قسم کا گوشت کھا سکتے ہیں جیسے چکن، گائے کا گوشت وغیرہ ۔
آپ مچھلی بھی کھا سکتے ہیں۔ آپ سمندری مچھلی جیسے سالمن، ٹونا، جھینگا کھا سکتے ہیں۔
آپ سبزیاں بھی کھا سکتے ہیں۔ آپ ہائی پروٹین والی سبزیاں کھا سکتے ہیں۔
آپ اپنی خوراک میں جامن، کیلا، اورنج، امرود جیسے پھل شامل کر سکتے ہیں۔
اس کے علاوہ آپ کوئنو، چیا سیڈز، سورج مکھی کے بیج کھا سکتے ہیں۔
آپ دودھ کی مصنوعات بھی کھا سکتے ہیں۔ مثلاً دودھ، پنیر، دہی جیسی غذائیں خوراک میں شامل کی جا سکتی ہیں۔

ان کھانوں سے پرہیز کریں:

پروسیسڈ فوڈ:

تھائی رائڈ کے مریضوں کو انتہائی پراسیس شدہ کھانے سے پرہیز کرنا چاہیے۔ پروسیسڈ فوڈ میں بہت زیادہ کیلوریز ہوتی ہیں۔ بہت زیادہ کیلوریز آپ کے لیے خراب ہو سکتی ہیں۔

جنک فوڈ :

جنک فوڈ کا استعمال بھی نہیں کرنا چاہیے۔ اس کے علاوہ زیادہ پراسیسڈ فوڈ جیسے ہاٹ ڈاگ، کیک، کوکیز کا استعمال نہیں کرنا چاہیے۔ پروسیسڈ فوڈ میں سوڈیم زیادہ ہوتا ہے۔ اس کا زیادہ استعمال تھائرائیڈ کے مریضوں پر مضر اثرات مرتب کرتا ہے۔

گلوٹین فوڈز:

تھائرائیڈ کے مریضوں کو بھی گلوٹین کی مقدار کم کرنی چاہیے۔ گلوٹین سے بنی غذائیں جیسے کہ گندم، جو اور رائی کو بھی نہیں کھانا چاہیے۔

بروکولی اور گوبھی تھائیرائیڈ کے مریضوں کو کچی یا کم پکی سبز پتوں والی سبزیوں سے بھی پرہیز کرنا چاہیے۔ ان میں اور خصوصیات ہیں، جو تھائیرائڈ کے مریضوں کے لیے نقصان دہ ہو سکتی ہیں۔

میٹھے کا استعمال:

آپ کو بہت زیادہ چینی استعمال نہیں کرنی چاہئے۔ ذیابیطس آپ کے ہاضمہ کو متاثر کر سکتی ہے۔ اس سے آپ کا وزن بھی بڑھ سکتا ہے۔ اس کے علاوہ شوگر آپ کے تھائرائیڈ گلینڈ کی سطح کو بھی کنٹرول کر سکتی ہے۔

سویا بین:

آپ کو سویابین یا سویا پر مشتمل کھانے کا استعمال بھی نہیں کرنا چاہیے۔ یہ تھائی رائڈ کا خطرہ بھی بڑھا سکتا ہے۔ سویابین میں پائے جانے والے فائٹوسٹروجن انزائمز کے کام کو بھی متاثر کر سکتے ہیں جو تھائیرائڈ ہارمونز پیدا کرتے ہیں۔

Thyroid Ke Mareezon Ko Kia Nhe Khana Chahiye

Discover a variety of Health and Fitness articles on our page, including topics like Thyroid Ke Mareezon Ko Kia Nhe Khana Chahiye and other health issues. Get detailed insights and practical tips for Thyroid Ke Mareezon Ko Kia Nhe Khana Chahiye to help you on your journey to a healthier life. Our easy-to-read content keeps you informed and empowered as you work towards a better lifestyle.

By Afshan  |   In Health and Fitness  |   0 Comments   |   2997 Views   |   19 Sep 2022
About the Author:

Afshan is a content writer with expertise in publishing news articles with strong academic background. Afshan is dedicated content writer for news and featured content especially food recipes, daily life tips & tricks related topics and currently employed as content writer at kfoods.com.

Related Articles
Top Trending
COMMENTS | ASK QUESTION (Last Updated: 17 April 2024)

تھائی رائیڈ کا بڑھتا ہوا مرض ۔۔ تھائی رائیڈ کے مریضوں کو کیا کھانا چاہیے اور کیا نہیں کھانا چاہیے؟

تھائی رائیڈ کا بڑھتا ہوا مرض ۔۔ تھائی رائیڈ کے مریضوں کو کیا کھانا چاہیے اور کیا نہیں کھانا چاہیے؟ ہر کسی کے لیے جاننا ضروری ہیں کیونکہ یہ ایک اہم معلومات ہے۔ تھائی رائیڈ کا بڑھتا ہوا مرض ۔۔ تھائی رائیڈ کے مریضوں کو کیا کھانا چاہیے اور کیا نہیں کھانا چاہیے؟ سے متعلق تفصیلی معلومات آپ کو اس آرٹیکل میں بآسانی مل جائے گی۔ ہمارے پیج پر کھانوں، مصالحوں، ادویات، بیماریوں، فیشن، سیلیبریٹیز، ٹپس اینڈ ٹرکس، ہربلسٹ اور مشہور شیف کی بتائی ہوئی ہر قسم کی ٹپ دستیاب ہے۔ مزید لائف ٹپس، صحت، قدرتی اجزاء اور ماڈرن ریمیڈی کے فوڈز میں موجود ہے۔